پی ٹی آئی کے اتنے لوگ رابطے میں ہیں کہ سمجھ نہیں آرہا کسے رکھیں اور کسے نہیں

 لاہور (24 نیوز اردو) مسلم لیگ ن کے سینئیر رہنما رانا ثناء اللہ نے حکومت جماعت کے رہنماؤں سے رابطے میں ہونے کا دعویٰ کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق رانا ثنااللہ نے ماڈل ٹاؤن لاہور میں علما ونگ کی تنظیم سازی مکمل کرنے کے بعد پریس کانفرنس کی۔ پریس کانفرنس کرتے ہوئے رانا ثناء اللہ نے کہا کہ حکومت کے خلاف کھڑے ہونے کے لیے شدید عوامی دباؤ ہے، جہاں جاتے ہیں، ہم سے یہی سوال ہوتا ہے کہ اپوزیشن اس نااہل اور کرپٹ حکومت سے کب جان چھڑوائے گی؟ مسلم لیگ ن کسی کے اشارے پر نہیں بلکہ عوامی دباؤ پر حکومت کے خلاف اقدامات کررہی ہے۔

پی ٹی آئی کے کئی لوگ رابطے میں ہیں، رابطے میں ہونے والے لوگوں کی تعداد اتنی زیادہ ہے کہ سوچ رہے ہیں کسے رکھیں کسے نہ رکھیں، اب تو ان کے اپنے لوگ پی ٹی آئی ٹکٹ پر الیکشن نہیں لڑنا چاہتے۔

پی ٹی آئی کے اتنے لوگ رابطے میں ہیں کہ سمجھ نہیں آرہا کسے رکھیں اور کسے نہیں

رانا ثناء اللہ نے کہا کہ 2018ء میں مسلم لیگ ن حکومت کے خلاف سازش کے تحت دھرنے ہوئے، ہماری کسی سے لڑائی نہیں ، صرف ملک میں آزادانہ اور منصفانہ انتخابات چاہتے ہیں۔


تحریک عدم اعتماد کی کامیابی کی صورت میں فیصلوں کا اختیار نوازشریف کو دے دیا گیا ہے۔ وزیراعظم کی جانب سے وزرا کو تعریفی اسناد دینے پر رانا ثنااللہ نے کہا کہ وزیراعظم نے مراد سعید کو نمبر وَن وزیر اس لیے قرار دیا کیونکہ اس جیسی کارکردگی کسی اور کی ہو ہی نہیں سکتی۔ اس کے علاوہ رانا ثناء اللہ نے حکومت کی جانب سے عوام کو دئے جانے والے صحت کارڈ کو بھی بڑا فراڈ قرار دیا۔

خیال رہے کہ اپوزیشن نے ایک مرتبہ پھر سے حکومت کو ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ ایک مرتبہ پھر سے اپوزیشن جماعتوں کا حکومت مخالف محاذ سرگرم ہو گیا ہے ۔ جبکہ مسلم لیگ ن کے قائد اور سابق وزیراعظم نواز شریف نے حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کے لئے بھی رضا مندی ظاہر کر دی ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف آئینی اور قانونی آپشنز کے استعمال کے حق میں ہیں۔ مسلم لیگ کے کئی رہنما اس سے قبل بھی حکومتی نمائندوں سے رابطے میں ہونے کا دعویٰ کر چکے ہیں۔

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے